فاخرہ بتول کے دو اشعار

دل میں طوفان بپا ہونے تک
وہ رہا ساتھ جدا ہونے تک
ٹانک جاو کوئی جھوٹا وعدہ
میرے آنچل پہ ہوا ہونے تک