ریس 2016 ہالی وڈ فلم پر کچھ تبصرہ

انیس سو پینتیس کی دنیا کی تصویر بناتی یہ فلم اس زمانے کے بڑے مسئلے کالے اور گورے کے فرق کو ساتھ ساتھ لیکر چلتی ہے۔
جسی اوینز جس نے انیس سو چھتیس کے اولمپکس میں چار میڈل جیتے اس کی یونیورسٹی زمانے سے لیکر اولمپئین بننے کی سچی داستان ہے۔
فلم کی کہانی موٹی ویشنل ہے اور مکالمے بہت خوبصورت اور جاندار ہیں۔ ۔۔۔۔ایک سین کی کہانی ہماری زبانی ملاحظہ ہو۔
بلیک کمیونٹی کے کچھ لوگ یہ چاہتے ہیں کہ جسی اوینز برلن جرمنی میں ہونے والے اولمپکس میں احتجاجا نہ جائے۔۔۔۔اس کا کوچ خواہشمند ہے کہ وہ ضرور جائے ایسے میں وہ اپنی بیوی سے مکالمہ کرتا ہے۔

تم مجھے مشورہ دو میں کیا کروں
تم بہتر جانتے ہو تمہیں کیا کرنا ہے۔
میں جب تم سے کہتا ہوں کہ مجھے بتاو تو بتاتی کیوں نہیں
میں تمہیں شاید پسند ہی اس لئے ہوں کہ تمہیں بتاتی کچھ نہیں۔
براہ کرم مجھے کہو کہ میں اولمپکس میں جاوں۔۔

ایک اور جگہ اس کی بیوی کہتی ہے ۔۔۔مجھے پتہ ہے تم سوچنے میں اچھے نہیں ہو اس لئے اس کام کو جانے دو۔

سچی بات ہے کہ ہمارے کو دل کو لگی ہے فلم۔۔۔ٹائم نکال کے ویکھ لیں۔۔۔ٹریلر پیش خدمت ہے





کچھ کاپی پیسٹ معلومات

Initial releaseFebruary 19, 2016 (USA)
Box office21.5 million USD